صفحۂ اول    ہمارے بارے میں    رپورٹر اکاونٹ    ہمارا رابطہ
پیر 22 جولائی 2019 

چینی جوڑے نے اپنے اپارٹمنٹ میں خود کو کٹوانے کے لیے 10 ہزار شہد کی مکھیاں پال لیں

اکثریت ڈیسک | اتوار اپریل 2019 

چین کے شہر ننگبو  میں پچھلے  ایک سال سے ایک چینی جوڑے نے اپنے بلندی پر واقع   اپارٹمٹ  کی بالکونی میں 10 ہزار مکھیاں  پالی ہوئی ہیں، جس سے ہمسائے بھی پریشان ہیں۔
اس چینی جوڑے نے جب ہمسایوں کی شکایت پر  کان نہیں دھرے تو ہمسایوں نے پولیس کو فون کر دیا۔ چینی جوڑے ، جن کا نام ظاہر نہیں کیا گیا، نے ان مکھیوں کو شہد کے لیے نہیں بلکہ انہیں اپنے علاج کے لیے رکھا ہے۔
چین میں شہد کے مکھیوں کے ڈنک  کو ادویات کا متبادل سمجھا جاتا ہے۔ اس کا ڈنک کئی بیماریوں جیسے   جوڑوں کا پتھرانا وغیرہ کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔تاہم ان مکھیوں نے ہمسایوں کے چہرے سوجھا دئیے ہیں۔یہ مکھیاں ہمسایوں کے لیے کئی طرح کی پریشانیوں کا باعث بن رہی ہیں۔
ہمسایوں کا کہنا ہے کہ یہ مکھیاں باہر دھوپ میں سوکھتے اُن کے کپڑوں پر بیٹ کر دیتی ہیں اور اُن کی کھڑکیوں کے باہر منڈلاتی رہتی ہیں، جس کی وجہ سے وہ اچھے موسم میں بھی کھڑکیاں نہیں کھول سکتے۔

بلڈنگ کی انتظامیہ نے بھی اس جوڑے سے مکھیاں ہٹانے کی درخواست کی لیکن اس جوڑے نے اپنی پالتو مکھیاں ہٹانے سے انکار کر دیا، جس پر بلڈنگ انتظامیہ اورہمسایوں نے 29 مارچ کو  پولیس کو بلا لیا۔

پولیس کے کہنے پر اس جوڑے نےپہلے پہل تو اپنی پالتو مکھیاں ہٹانے سے انکار کر دیا لیکن جب پولیس نےبتایا کہ  وہ  اس جوڑے پر 200 سے 500 یوان (30 سے 74 ڈالر) جرمانہ کر دیں گے تو اس جوڑے نے مکھیاں ہٹانے کی یقین دہانی کرا دی۔
سوشل میڈیا پر بھی اس جوڑے کو خاصی تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔انہیں خودغرض اور ہمسایوں کی بھلائی سے غافل قرار دیا جا رہا ہے۔ایک صارف نے اس خبر پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ اپنے گھر میں ڈائنو سار بھی پال سکتے ہیں مگر شرط ہے کہ اس سے دوسرے لوگ متاثر نہ ہوں۔

ہمارے بارے میں جاننے کے لئے نیچے دئیے گئے لنکس پر کلک کیجئے۔

ہمارے بارے میں   |   ضابطہ اخلاق   |   اشتہارات   |   ہم سے رابطہ کیجئے
 
© 2019 All Rights of Publications are Reserved by Aksriyat.
Developed by: SuperWebz.com
تمام مواد کے جملہ حقوق محفوظ ہیں © 2019 اکثریت۔